Home / ادب نامہ / نثر / کافکا کے افسانے / ایک چھوٹی سی کہانی – فرانز کافکا

ایک چھوٹی سی کہانی – فرانز کافکا

ایک چھوٹی سی کہانی

 

افسوس! چوہے نے کہا۔ دنیا روز بروز چھوٹی ہوتی جا رہی ہے ۔ شروع شروع میں تو یہ اتنی بڑی تھی کہ مجھے خوف آتا تھا۔ میں بھاگتا رہا ، بھاگتا رہا، اور جب آخر کار ، مجھ کو دور پر داہنے بائیں دیواریں دکھائی دینے لگیں تو میں بہت خوش ہوا تھا۔ لیکن یہ لمبی دیواریں اس قدر تیزی سے تنگ ہوئی ہیں کہ سرکتے سرکتے اب میں آخری کوٹھڑی کے اس سرے پر چوہے دان لگا ہوا ہے جس میں مجھ کو داخل ہونا ہی پڑے گا۔

تم کو صرف اپنا رخ بدل دینا ہے ، بلی نے کہا اور اسےکھا گئی۔

 

 

admin

Author: admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے