Home / خبریں / فائیو جی نیٹ ورک لانچ کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

فائیو جی نیٹ ورک لانچ کرنے والا دنیا کا پہلا ملک

جنوبی کوریا آئندہ جمعے سے فائیو جی نیٹ ورک استعمال کرنے والا دنیا کا اّولین ملک بن جائے گا۔ یہ نیٹ ورک فور جی سے بیس گنا تیز رفتار ہے۔ صارفین ایک مکمل فلم محض ایک سیکنڈ سے بھی کم وقت میں ڈاؤن لوڈ کر سکیں گے۔
فائیو جی نیٹ ورکس کو مواصلات کی دنیا میں انقلاب قرار دیا جا رہا ہے اور اس ایجاد سے اربوں انسانوں کی روزمرہ کی زندگی تبدیل ہو جائے گی۔ یہ سُپر فاسٹ وائرلیس ٹیکنالوجی ٹوسٹروں، موبائل فونز اور الیکٹرک کاروں سے لے کر بجلی گھروں تک تقریباً ہر چیز کے لیے معاون ثابت ہو گی۔

جمعہ پانچ اپریل کو ہی سمارٹ فون بنانے والے بڑے جنوبی کوریائی ادارے سام سنگ نے اپنا نیا موبائل فون ’گلیکسی ایس ٹین فائیو جی‘ عام کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔ یہ دنیا کا وہ پہلا موبائل فون ہوگا، جو اس ٹیکنالوجی کو استعمال کر سکے گا۔ اس کا حریف موبائل ساز ادارہ ایل جی بھی دو ہفتے بعد ایک نیا موبائل فون لانچ کر رہا ہے، جو یہ ٹیکنالوجی استعمال کر سکے گا۔

کورین ٹیلی کام کے نائب سربراہ لی پل جے کے اندازوں کے مطابق رواں برس کے اختتام تک ان کے ملک میں تیس لاکھ سے زائد افراد فائیو جی نیٹ ورک استعمال کریں گے۔ اتنے بڑے پیمانے یا ملکی سطح پر ابھی تک دنیا کے کسی بھی ملک نے فائیو جی سروس متعارف نہیں کرائی ہے۔

موبائل فون نیٹ ورک کی پانچویں جنریشن یعنی فائیو جی میں ہائی فریکوئنسی اور بینڈ ویتھ استعمال کی جائے گی۔ اس ٹیکنالوجی سے فی سیکنڈ دس گیگا بائٹ منتقل ہو سکتے ہیں۔ ابھی تک فور جی نیٹس کے لیے سات سو میگا ہرٹس سے چھ گیگا ہرٹس کی فریکوئنسیاں استعمال کی جا رہی تھیں لیکن اب فائیو جی میں اٹھائیس سے ایک سو گیگاہرٹس کے درمیان فریکوئنسیاں استعمال کی جائیں گئی۔ سویڈن کی ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی ایریکسن کے اندازوں کے مطابق سن دو ہزار چوبیس میں دنیا کی چالیس فیصد آبادی فائیو جی ٹیکنالوجی استعمال کرے گی۔ کئی دیگر اندازوں کے مطابق سن 2034 تک عالمی سطح پر فائیو جی نیٹ ورک مستعمل ہو جائے گا۔

admin

Author: admin

Check Also

انڈین میڈیا کی گھناؤنی حرکت بےنقاب

بھارتی میڈیا کا ایک اور جھوٹ بے نقاب ہوگیا، بھارت نے جان بوجھ کر پھر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے