Home / ادب نامہ / نثر / کافکا کے افسانے

کافکا کے افسانے

بالٹی سوار-فرانز کافکا

بالٹی سوار سارا کوئلہ ختم ، بالٹی  خالی ، بیلچہ بے مصرف، ، آتش دان ٹھنڈی سانسیں بھرتا ہوا، کمرہ منجمد ہوتا ہوا، کھڑکی کے باہر پتیاں ٹھٹھری ہوئی ، پالے میں لپٹی ہوئی ، آسمان ہر اس شخص کے مقابلے پر رو پہلی سپر بنا ہوا جو اس سے …

Read More »

پل – فرانز کافکا

پل میں سردی سے اکڑ گیا تھا ۔ میں ایک پل تھا۔ میں ایک درے پر پڑا ہوا تھا۔میرے پیر درے کے طرف تھے ، ہاتھوں کی انگلیاں دوسری طرف جمی ہوئی تھیں ۔ میں نے اپنے آپ بھر بھری مٹی میں مضبوطی سے بھینچ رکھا تھا ۔ میرے دونوں …

Read More »

حویلی کے پھاٹک پر دستک-فرانز کافکا

حویلی کے پھاٹک پر دستک گرمی کا موسم تھا ، تپتا ہوا دن ۔ اپنی بہن کے گھر گھر لوٹتے  ہوئے میں  ایک بہت بڑے مکان کے پھاٹک  کے سامنے سے گزر  رہا تھا ۔اب میں یہ نہیں بتا سکتا  کہ میری بہن  نے پھاٹک پر  شرارتاً دستک دے دی  …

Read More »

بے خیالی میں کھڑکی سے دیکھنا- فرانز کافکا

بے خیالی میں کھڑکی سے دیکھنا آخر یہ بہار کے دن  جو سر پر چلے آرہے ہیں، ہم ان کا کیا کریں ۔ آج سویرے سویرے آسمان کا رنگ  مٹیالا تھا لیکن اب اگر  آپ کھڑکی پر جاتے ہیں  تو آپ کو تعجب  ہوتا ہے  اورآپ دریچے  کے کھٹکے  پر …

Read More »

خانہ دار کی پریشانیاں- فرانز کافکا

خانہ دار کی پریشانیاں کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ  "اودر ادک”  اصلاً سلافی زبان کا لفظ ہے  اور اسی بنیادپر  وہ اس کی تاویل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ دوسری طرف  بعض  لوگوں  کا عقیدہ ہے کہ  اس کی  اصل جرمن ہے  اور سلافی زبان کا صرف اثر پڑا …

Read More »

گیلری میں – فرانز کافکا

گیلری میں اگر سرکس میں کسی مریل مدقوق سی کرتب دکھانے والی کو کوئی کوڑا گھماتا ہوا بے درد رِ نگ ماسٹر کسی بدلگام گھوڑےکی پیٹھ پر بٹھا کر مجبور کرتا کہ وہ کبھی سیر نہ ہونے والے تماشائیوں کے سامنے مہینوں تک رکے بغیر چکر پر چکر لگائے جائے …

Read More »

ایک قدیم مخطوطہ- فرانز کافکا

ایسا لگتا ہے کہ ہمارے ملک کے دفاعی نظام میں بہت سی کوتاہیاں رہنے دی گئی ہیں۔ اب تک ہم نے اس معاملے سے کوئی سروکار نہیں رکھا تھا اور اپنے روز مرہ کے کاموں میں لگے رہتے تھے لیکن حال میں جو باتیں ہونے لگی ہیں انہوں نے ہمیں …

Read More »