Home / ادارتی پالیسی

ادارتی پالیسی

ادارتی پالیسی

 

ہم لوگ ” اردو ادبی اور صحافتی ای میگزین ہے، جس کا مقصد اردو زبان و ادب کا فروغ اورر قارئین تک بہترین اردو ادب کو آسانی سے بہم پہنچانا ہے۔”

ہم لوگ” اردو زبان کی ترویج و اشاعت کے لیے بھی اپنے معاصرین کے ساتھ قدم سے قدم ملانے کی کوشش کرے گا اور تحریروں کو ادارتی و لسانیاتی پیمانے پر مناسب جانچ پرکھ کے بعد ہی شائع کیا جائے گا۔ ایک اچھی تحریر کے بنیادی لوازم پر رہنمائی کے لیے مضامین مکالمہ پر پیش کیے جاتے رہیں گے۔

ہم لوگ آزادی اظہار کے ساتھ ساتھ وطنیت، مذہبیت اور اخلاقیات کے مروجہ پیمانوں کو مدنظر رکھے گا، اور ایسی کسی تحریر کی حوصلہ افزائی نہیں کی جائے گی جو ذاتیات، کسی طبقے یا شعبے یا کسی بھی قسم کے تعصب کو ہوا دینے کا باعث بنے۔

ہم لوگ تمام لکھنے والوں کے حق اشاعت کا احترام کرتا ہے اور کسی بھی تحریر کو بلاجواز شائع نہ کرنے کے عمل کو آزادی اظہار اور مکالمے کی فضا کے خلاف سمجھتا ہے۔ مگر ناگزیر حالات یا کسی مخصوص صورت حال میں، جو ادارتی ٹیم کے سامنے پیش آئے، ایڈیٹر “ہم لوگ” کسی بھی تحریر کی اشاعت سے معذرت کرنے کا کلی اختیار رکھتا ہے۔

ہم لوگ ایک غیرجانبدار پلیٹ فارم کے طور پر تمام تحریروں کی اشاعت کی زمہ داری لیتا ہے، مگر ان تمام تحریروں میں شائع مواد اور خیالات سے ہم لوگ کا متفق ہونا ضروری نہیں، اور ان تمام تحریروں کی اخلاقی اور قانونی زمہ داری بالآخر صاحب تحریر کی ہی ہوگی

ہم لوگ میں شامل تمام تحریروں کے جملہ حقوق ان کے لکھنے والوں کے ہی رہیں گے، اور ان کی کسی تحریر کو ان کی اجازت کے بغیر کسی اور پلیٹ

فارم پر دوبارہ شائع نہیں کیا جائے گا۔ “ہم لوگ” کو اپنے شائع شدہ مواد کو سوشل یا پرنٹ میڈیا پر مشتہر کرنے کے مکمل حقوق حاصل ہوں گے. “ہم لوگ” کیلیے تحریر، تصویر یا وڈیو بھیجنے کو اس پالیسی پر قانونی رضامندی تصور کیا جائے گا۔

ہم لوگ پاکستان اور بیرون پاکستان ایسے تمام اصحاب کو جو اردو سے محبت کرتے ہیں، ایک ایسا ماحول مہیا کرنے کی کوشش کرے گا جس میں تمام اردو بولنے، لکھنے اور سمجھنے والے اس مکالمے کا حصہ بن ایک ایک وسیع خاندان میں شامل ہو سکیں ۔

کسی بھی ادبی صحافتی و سماجی موضوع پر کم سے کم پانچ سو اور زیادہ سے زیادہ پندرہ سو الفاظ پر مشتمل کوئی بھی تحریر آپ ہمیں ارسال کرتے ہیں۔

آپ کی تحریر کمپوز شدہ، آپ کی اپنی ای میل آئی ڈی سے، آپ کی مکمل شناخت کے ساتھ موصول ہونی چاہیے۔

تحریر کے ساتھ تصویر کا بھی تقاضا ہو گا۔

آپ بوجوہ قلمی نام سے بھی لکھ سکتے ہیں، لیکن ادارے کو اپنی اصل شناخت بتانا لازم ہو گا۔ ادارہ آپ کی اس شناخت کی پاسداری کا پابند ہو گا۔

شخصی طنز اور تحقیر پر مبنی تحریر شایع نہ ہو گی۔

مذہبی، فرقہ ورانہ، گروہی، لسانی، اور نسلی منافرت پھیلانے والی تحریریں بھی ہم شایع نہیں کر سکیں گے۔

ہم ایسی کوئی خبر اور تحریر شایع کرنے سے بھی معذور ہوں گے؛
جس کے ذرایع نامعلوم ہوں….
جس کے بھیجنے والے کی شناخت واضح نہ ہو….
جو محض انتشار پر مبنی ہو….
جو کسی بھی پہلو سے قانون شکنی پر مبنی ہو۔

ادارہ ! ہم لوگ۔