Home / شخصیت سازی / زندگی کی پریشانیوں سے کیسے نمٹیں ؟

زندگی کی پریشانیوں سے کیسے نمٹیں ؟

بڑھے ہوئے مسائل کے پیشِ نظر پریشانیاں آج کل ہر کسی کی زندگی کا حصہ ہیں ۔ شائد ہی کوئی ایسا شخص ہو جس کو کوئی پریشانی نہ ہو ۔ لیکن ان سب مسائل کے باوجود اہم با ت یہ ہے کہ ان مسائل سے کیسے نمٹا جائے۔ پریشانیوں میں گھر کر اگر آپ خود پریشان ہو جائیں تو ان سے کیسے بچیں گے، لہٰذا ان مسائل پر عمل کریں۔

مسئلہ کو سمجھنےکی کوشش کریں

اگر زندگی میں کوئی بھی پریشانی ہو تو سب سبے پہلے مسئلہ کو سمجھنے کی کوشش کریں ۔ اسے اہمیت دیں نظرا نداز نہ کریں ۔دنیا کے تمام کامیاب افراد کی خاصیت ہے کہ مصائب کے آگے ہتھیار نہیں ڈالتے ۔ خوفزدہ ہونے کے باوجود ٹھنڈے دل و دماغ سے فیصلہ کرتے ہیں ۔ اگر حقیقی نظر سے تمام پہلوؤں کا جائزہ لیا جائے تو کسی بھی مسئلے کو سمجھا جا سکتا ہے اور اس کئی حل سامنے آتے ہیں۔

حل ڈھونڈیں

ہر پریشانی اپنے اندر ہی حل رکھتی ہے ۔ کسی بھی پریشانی پر بوکھلانے کی بجائے نہائت سوچ و بچار کے بعد اس کے حل کے لیے کوشاں ہو جائیں ۔ صبر اور سکون کے ساتھ پریشانی سے نجات کا راستہ تلاش کریں ۔ اس میں کوئی شک نہیں انسان ہر مشکل کا حل تلاش کر سکتا ہے ۔ بس تھوڑی کوشش کرنی پڑتی ہے اور مسائل خود بخود حل ہوتے چلے جاتے ہیں۔

گھبراہٹ سے بچیں

عام طور پر مختلف تجربات میں دیکھا گیا ہے کہ جب لوگ پریشان ہوتے ہیں تو ان پر گھبراہٹ طاری ہو جاتی ہے۔ کچھ تو فطری عمل ہے لیکن ایک ایسا دماغ جو سوچنے کی بجائے بد حواسی کی طرف لے جائے تو ایسی صورت میں حالات بد سے بدتر ہوتے چلے جاتے ہیں۔ پریشانیوں کے آگے ہتھیار ڈال دینے والا دماغ خود انسان کا دشمن بن جاتا ہے ۔ اس لیے کسی بھی پریشانی کو اپنے اوپر طاری نہ ہونے دیں ۔

مستقل مزاجی اور تحمل

کسی بھی مسئلہ کے حل کے لیے مستقل مزاجی اور تحمل ایسے ہتھیار ہیں جو آپ کو پریشانی سے بچاتے ہیں۔ یہ دو ہتھیار ہر قسم کے حالات میں آپ کاساتھ دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں ۔ دنیا کی ہر پریشانی کے حل کے لیے آپ کے پاس آپ ہی کے دماغ میں ترکیبیں موجود ہیں جنھیں مستقل مزاجی اور تحمل سے اپلائی کریں تو پریشانی سے چھٹکارا پا سکتے ہیں۔

دماغ کو پرسکون رکھیں

پریشانیوں سے نجات کے لیے اپنے ساتھ ساتھ دماغ کو پرسکون رکھنا بہت ضروری ہے۔ دماغ سے اسی وقت تعمیری مشورے حاصل کیے جاسکتے ہیں جب دماغ کی مجموعی حالت تسلی بخش ہو ۔ دماغ کو پرسکون رکھنا کوئی اتنا مشکل کام نہیں ہے۔ بھاگ دوڑ ، بے جا فکریں اور چیخ و پکار سے پرہیز کریں تو کچھ دنوں میں محسوس ہو گا کہ تحمل ، بردباری، خوش اخلاقی آپ کے مزاج کا حصہ بن چکی ہو گی۔ جو کسی بھی بڑے سے بڑے مسئلے کو حل کرنے کے لیے بہترین ذریعہ ہیں۔

 

یقین کا ساتھ نہ چھوڑیں

آپ کا اپنے اورپر یقین ہی آپ کی کامیابی ہے ۔ یقین مشکلات کے حل میں ایسے ہی کام کرتا ہے جیسے گاڑی کو چلانے میں پٹرول کاکام ہوتا ہے ۔ مشکلات سے خوش اسلوبی سے نمٹنے کے لیے معلومات، تفکر اور یقین ضروری ہیں ۔ اگر آپ ان سے لیس ہیں تو کوئی پریشانی آپ کو پریشان نہیں کر سکتی ۔ کیونکہ آپ وہ سب کچھ کر سکتے ہیں کو آپ کرنا چاہتے ہیں۔

پریشانی سے مبرا زندگی

اکثرلوگوں کی یہ خواہش ہوتی ہے کہ ان کی زندگی میں کوئی پریشانی نہ ہو ، اوریہی خواہش بہت سی پریشانیوں کو جنم دیتی ہیں ۔ آپ خود سوچیں ایسا کیسے ہو سکتا ہے کہ آپ اتنی لمبی زندگی گزاریں کہ اور کوئی اونچ نیچ نہ آئے۔ زندگی ایسی گزرگاہ ہے جس میں بے شمار مسائل ہیں اور اسی راہ پہ خوبصورت گل و گلزار بھی ہیں ۔

 

admin

Author: admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے