Home / خبریں / چینی کمپنی ”ہواوے” پر امریکہ کی سخت قانونی چارہ جوئی

چینی کمپنی ”ہواوے” پر امریکہ کی سخت قانونی چارہ جوئی

امریکی حکام نے چین کی معروف ٹیکنالوجی کمپنی ہواوے پر امریکی کمپنیوں کے راز چرانے اور ایران پر عائد امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی کے الزامات عائد کرتے ہوئےاس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا اعلان کیا ہے ۔سر پیر کو نیویارک کی ایک وفاقی عدالت میں ہواوے کمپنی کے ایک اعلی افیسر اور اسکی ذیلی کمپنیوں کے خلاف فرد جرم پیش کی گئی۔جن میں ان پر ١٣ الزامات کے تحت مقدمہ چلانے کی درخواست کی گئی ہے۔
فرد جرم میں ہواوے کی چیف فنانشل آفیسر وانز و مینگ اور ہواوے کی دو ذیلی کمپنیوں پر امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ایران کے ساتھ تجارت کرنے کے الزامات بھی شامل ہیں ۔فرد جرم میں کہا گیا ہے کہ وانز وینگ اور ہیواوے کے کئی دیگر ملازمین نے کمپنی کی ایران میں تجارتی سرگرمیوں کے بارے میں کئی بین الاقوامی مالیاتی اداروں اور امریکی حکومت کو دھوکے میں رکھا۔
امریکی استغاثہ نے دعوی کیا ہے کہ ہواوے نے ایک سازش کے تحت ایران میں اسکائی کام ٹیک کمپنی لمیٹڈ کے نام سے اپنی تجارتی سرگرمیاں انجام دیں اور امریکی حکومت اور دیگر مالیاتی اداروں سے اس بارے میں جھوٹ بولا کہ یہ کمپنی ایران میں محض اس کی بزنس پارٹنر ہے۔
واضح رہے کہ وانزومینگ ہواوے کے بانی کی بیٹی ہیں اور اسکائی کوم کےبورڈ کی بھی رکن رہ چکی ہیں۔انہیں گزشتہ سال دسمبر میں کینیڈا کی حکومت نے گرفتار کیا تھا ۔انکی گرفتاری پر چین نے سخت احتجاج کیا تھا۔تاہم اس پریس کانفرنس میں امریکی حکام نے ہواوے کی سرگرمیوں پرچین کی حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔
ہواوے کی انتظامیہ نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ اسے امریکی حکام کے الزامات پر مایوسی ہوئی ہے۔کمپنی نے دعوی کیا ہے کہ اس نے امریکی حکام سے ان کے خدشات کو دور کرنے کےلیے بات چیت کی کوشش کی تھی لیکن انکی بات چیت کی پیشکش بغیر کوئی وجہ بتائے مسترد کر دی گئی تھی۔

admin

Author: admin

Check Also

انڈین میڈیا کی گھناؤنی حرکت بےنقاب

بھارتی میڈیا کا ایک اور جھوٹ بے نقاب ہوگیا، بھارت نے جان بوجھ کر پھر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے