Home / صحت / خراٹے ، مہلک بیماری کا پیش خیمہ

خراٹے ، مہلک بیماری کا پیش خیمہ

آج کل تیز رفتار زندگی نے جہاں ہمارے کھانے پینے کے اوقات بدل دیے ہیں وہاں سونے اور جاگنے کے وقت کو بھی تبدیل کردیا ہے۔ ساتھ ہی عصری ترقی نے ہمیں مزید آرام دہ بنا دیا ہے جس کی وجہ سے ہماری صحت میں کئی مسائل پیدا ہوگئے ہیں۔ انہیں مسائل میں ایک مسلہ خراٹے ہیں۔
آرام طلب زندگی اور غیر صحت مند غذائی عادات اس کی اصل وجہ ہیں ۔ آج بھی ہمارے معاشرے میں خراٹوں کو بیماری نہیں سمجھا جاتا جبکہ دنیا کے دیگر ترقی یافتہ ممالک میں اس کو سنجیدگی سے دیکھا جاتا ہے۔ خراٹے کو معمولی سمجھ کر نظرا نداز کرنا خطرناک رحجان ہے۔ خراٹوں سے بہت سے طبی مسائل پیدا ہوتے ہیں ۔ یوں تو خراٹے کوئی مہلک مرض نہیں لیکن کئی ایک مہلک امراض جیسے امراضِ قلب، بلڈ پریشر، ذیابیظس، اسٹروک ، نیند کی کمی ، ڈپریشن ، ذہنی دباؤ وغیرہ جیسی بیماریوں کے لیے راستہ ضرور فراہم کرتے ہیں ۔
موجودہ دور میں تقریباً 20 فی صد لوگ اس مرض کا شکار ہیں ۔ اگر خراٹے ابتدائی درجے کے ہوں تو وہ زیادہ نقصان دہ نہیں ہوتے اور اگر یہ شدت اختیار کر جائیں تو مہلک امراض کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ ابتدا میں ہی ڈاکٹر سے رجوع کرکے اس بیماری سے نجات پا کر زندگی کو خوشحال بنایا جائے۔

 

 

admin

Author: admin

Check Also

فالج کی چند خاموش علامات

فالج ایسا مرض ہے جس کے دوران دماغ کو نقصان پہنچتا ہے اور جسم کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے