Home / صحت / بیماریاں / خودکلامی۔۔۔۔ڈپریشن سے بچنےکے لیے انتہائی مفید۔ مگر کیسے؟

خودکلامی۔۔۔۔ڈپریشن سے بچنےکے لیے انتہائی مفید۔ مگر کیسے؟

کہنے والے کہتے ہیں کہ زندگی کی راہوں پر چلتے ہوئے حالات صدا ایک سے نہیں رہتے۔ہمشہ آسانیاں ہی انسان کا مقدر نہیں ٹھہرتیں ،ان راہوں پرفراز بھی نشیب کےہم پلہ سفر کرتے ہیں اور وہی انسان جوایک وقت میں بےشمار دوستوں اور غم خواروں کی معیت میں ہوتا ہے اگلےہی لمحے تنہائی کی عمیق گہرائیاں اسکا مقدر ٹھہرتی ہیں۔ان حالات میں جب دوسرا کوئی بشردلجوئی کے لیےموجود نہیں ہوتا اورتنہائی انسان کی سب سے بڑی ساتھی قرار پاتی ہے تواس وقت دل کی بات کرنےاور سننے کےلیے خودسے بہترکوئی ہستی نہیں ہوسکتی ۔تنہائی کی ان ساعتوں میں دل پر مرہم رکھنے کوسوائے اپنے أپ کی دلجوئیکرنا نفسیاتی طورپرمفیدہوتا ہے ۔سائنسدانوں نے ایک تازہ ترین تحقیق کےبعد یہ تجویز کیا ہے کہ خودکلامی ڈپریشن اور زہنی تناؤ جیسے مسائل سے نجات حاصل کرنے میں بےحدمفید ثابت ہوتی ہیں ۔تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ خود سے باتیں کرنا دماغ کے لیے بہت سکون دہ فعل ہے۔اس سے توجہ مرکوز کرنے میں مدد ملتی ہے اور مایوسی اور یاس کی کیفیت کو دور کرنے پر بھی خودکلامی بہترین معاون ثابت ہوتی ہے ۔یہ دورحاضر کی برق رفتاری نے جہاں انسان کے لیےبہت سی آسانیاں اور رابطوں کے نئے نئے ذرائع پیداکیے ہیں وہیں اسی چکاچوند ترقی نے انسان کو تن تنہا بھی کر دیا ہے۔وہ لوگوں کی بھیڑ میں بھی اکیلا ہے اور اس اکیلے پن میں جب کوئی اسکی بات سننے والا نہیں ہوتا تو وہ اور زیادہ پریشان،مایوس اور ذہنی تناٶ کا شکار ہوجاتا ہے ۔سائنسدانوں کی حالیہ تحقیق ایسے لوگوں کیلۓ خوشخبری لائی ہے جنہیں ایسی صورتحال کا سامنا رہتا تھا۔تحقیق کاروں نے تجویز کیا کہ تنہائی اور پریشانی کےعذاب سے بچنے کےلیے ایسے لوگوں کو اپنے آپ سے باتیں نہیں کرنی چاہیئں۔انہیں ارد گرد کےواقعات نے آپ سے شیئرکرنے چاہیئں اور دل کا بوجھ ہلکا کرنا چاہیے۔یہ طریقہ تنہائی اور اداسی کو کم کرنے میں بہت مفید ثابت ہوتا ہے۔یورپ میں ایسے لوگوں کی ایک بڑی تعداد پائی جاتی ہے جنہیں دوستی اور باتیں کرنےکے لیے اپنے علاوہ کوئی میسر نہیں آتا۔اس قسم کے لوگوں میں بوڑھے لوگوں کی تعداد زیادہ ہے۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ تنہائی کے عالم میں مسلسلرہنا انسان کو پہلے سے بھی زیادہ اداس کر دیتی ہے لیکن اگر ہر بات آپ اپنے آپ سے کرتے رہیں گے تو دل بہت ہلکا رہے گا اور جب دل ہلکارہے گااور ذہنی تناؤ میں کمی آئے گی تو نیند بھی بہتر طور پر آئےگی۔

admin

Author: admin

Check Also

فالج کی چند خاموش علامات

فالج ایسا مرض ہے جس کے دوران دماغ کو نقصان پہنچتا ہے اور جسم کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے