Home / خبریں / انٹر نیشنل / امریکہ حکومتی شٹ ڈاٶن جاری،ٹرمپ نے نئی پیشکش کردی

امریکہ حکومتی شٹ ڈاٶن جاری،ٹرمپ نے نئی پیشکش کردی

امریکی سینٹ میں ٢ بلوں کو مسترد کیے جانے کے بعد امریکی صدر نے دوبارہ بند لفظوں مں ایمرجنسی کی دھمکی دےدی۔
امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈیموکریٹس کو پیش کش کی ہے کہ اگر وہ انہیں میکسیکو سرحدپردیوارکی تعمیر کے لیےابتدائی رقم فراہم کردیں تو وہ وفاقی حکومت کاجاری شٹ ڈاؤن عارضی طور پر ختم کرنے پر رضامند ہیں ۔جمعرات کو وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے گفتگو میں صدر ٹرمپ نے اپنے موقف کو دہرایا کہ امریکہ پرجرائم پیشہ افراد۔انسانی اسمگلروں اور منشیات کے حملے کو روکنے کےلیے امریکہ کو میکسیکو کے ساتھ سرحدپر دیوار کی ضرورت ہے۔
صدر نے کہا کہ انکی پالیسیوں کے نتیجے میں امریکہ کہ معیشت بہتر ہوئی ہے اور روزگار کے مواقع بڑھے ہیں جس کی وجہ سے غیر ملکی تارکین وطن کی ایک بڑی تعداد امریکہ آنا چاہتی ہے۔لیکن انکی حکومت کسی کو غیرقانونی طورپر امریکہ نہیں آنے دیں گےاور جو امریکہ آنا چاہتا ہے اسے قانونی راستہ اختیار کرنا ہو گا۔لیکن ساتھ ہی ٹرمپ نے خبردار کیا کہ اگر کانگریس کے ساتھ کوئی مناسب سمجھوتہ نہ ہوا تو انکے پاس دیوار کی تعمیر کےلیے درکار فنڈز کے حصول کے متبادل راستے بھی موجود ہیں ٹرمپ کا یہ بیان انکے ایمرجنسی نافذ کرنے کی دھمکی کے تناظر میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔
قابل غور ہے کہ امریکی صدر نے ابتدائی رقم کے عوض شٹ ڈاؤن ختم کرنے کی پیشکش جمعرات کو سینٹ میں ان دو بلوں کو مسترد ہونے کے بعد کی ہےجو ڈیموکریٹ اور ری پبلکن ارکان نے الگ الگ پیش کیے تھے۔دونوں بلوں کا مقصد وفاقی حکومت کے ان محکموں کو عبوری مدت کےلیے فنڈزفراہم کرنا تھا جو ٢٢ دسمبر سے جاری جزوی شٹ ڈاؤن کے باعث بند ہیں۔
سینٹ میں ری پبلکن ک جانب سے پیش کیے جانے والے بل میں سرحدپردیوارکی تعمیر کےلیے ٥ ارب ٧ کروڑ ڈالر کی رقم کے علاوہ ٣٠ ستمبر کو ختم ہونےوالےرواں مالی سال کی باقی مدت کے لیے حکومت کو درکار فنڈز مختص کیے گئےتھے۔لیکن سینٹ نے وہ بل ٤٧ کے مقابلے میں ٥٠ ووٹوں سے مسترد کر دیا۔
سینٹ نے ڈیموکریٹس کی جانب سے پیش کیا جانے والا ایک دوسرا بل بھی ٤٤ کے مقابلے میں ٥٢ ووٹوں سے مسترد کر دیا جس میں سرحدوں کی سیکورٹی اور امیگریشن سے متعلق کوئینکات شامل نہیں تھے لیکن اس بل میں حکومت کے بند محکموں کو ٢ ہفتوں کےلیے کھولنے کی تجویز شامل تھی تاکہ اس عرصے کے دوران ڈیموکریٹس اور ریپبلکن طویل المدتی بجٹ پر اپنے اختلافات دور کرلے۔ان دوران بلوں کو ١٠٠ رکنی سینٹ سے منظور کےلیے کم از کم ٦٠ ووٹ درکار تھے۔اب ان دونوں بلوں کے مسترد ہونے کے بعد دونوں پارٹیوں کے درمیان شٹ ڈاؤن عارضی طور پر ختم کےلیے مذاکرات شروع ہو گئے ہیں۔جمعرات کو سینٹ میں بلوں رائے شماری کےفوری بعد سینٹ میں اکثریتی ریپبلکن لیڈرمچ مکونیل نے ڈیموکریٹ لیڈر چک شمر فون پر اس ضمن میں گفتگو کی۔

admin

Author: admin

Check Also

ایران نےامریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے سترہ جاسوس گرفتار کرلیے

ایران نے امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے سترہ جاسوس گرفتار کرلئے، ایرانی وزارت …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے